جہلم

جہلم میں کچہری روڈ پر قائم نجی ہاسٹل کے بااثر مالکان نے گندا پانی سڑک پر چھوڑ دیا

جہلم: محکمہ ماحولیات، میونسپل کمیٹی کی سرپرستی کچہری روڈ پر قائم نجی ہاسٹل کے بااثر مالکان نے گندہ پانی سڑک پر چھوڑ دیا، گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج برائے خواتین، اپواء سکول کے طلباء و طالبات کو مشکلات کا سامنا، سڑک گڑھوں میں تبدیل متعلقہ اداروں نے عوامی مسائل سے منہ موڑ لیا، علاقہ مکین سراپا احتجاج ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ضلع کچہری کی بغل میں قائم نزد گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج برائے خواتین ، اپواء سکول کے عقب میں قائم نجی ہاسٹل کے بااثر مالکان نے ہاسٹل کا گندہ پانی سیوریج سسٹم میں منتقل کرنے کی بجائے کچہری روڈ پر چھوڑدیا ہے جس کیوجہ سے سڑک پر سے گزرنے والے سرکاری و نجی اداروں کے ملازمین سمیت طلباء و طالبات کو مشکلات درپیش ہیں۔

شہر کی سماجی، رفاعی، فلاحی، کارروباری تنظیموں کے عمائدین کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ کچہری روڈ جو کہ پہلے ہی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو کر گڑھوں میں تبدیل ہو چکی ہے اوپر سے بااثر افراد نے اپنے کارروباری مراکز کا گندہ پانی سڑک پر چھوڑ رکھا ہے جو پھیل کر کیچڑ کی صورت اختیار کررہا ہے، یہ پانی سڑک پر پھیلنے کے ساتھ ساتھ سکول میں بھی داخل ہورہاہے اور کالج کے داخلی گیٹ کے سامنے گندہ پانی جمع ہونے سے و طالبات ، اساتذہ سمیت سڑک پر سے گزرنے والے تمام افراد کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔

اس حوالے سے اپواء سکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سکول کی دیوار کے ساتھ ہی میونسپل کمیٹی نے فلیتھ ڈپو قائم کر رکھا ہے جہاں علاقے کا کوڑا کرکٹ پھینکا جا رہا ہے کوڑے سے اٹھنے والے تعفن سے سڑک کے دونوں اطراف قائم سرکاری تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم بچے بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں ۔ میونسپل کمیٹی کا عملہ کئی کئی روز تک گندگی نہیں اٹھاتا جس کیوجہ سے کوڑا کرکٹ سڑک اور گلی میں پھیل جاتا ہے۔

اپواء سکول کی انتظامیہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ سکول کے عقب میں بااثر افراد نے نجی ہاسٹل قائم کر رکھا ہے جس کا گندہ پانی سیوریج سسٹم کے ساتھ منسلک کرنے کی بجائے سڑک پر چھوڑ دیا گیا ہے جس کیوجہ سے گندہ پانی سڑک پر پھیلنے کے ساتھ ساتھ سکول کے داخلی دروازے کے ذریعے سکول میں داخل ہوجاتا ہے جس سے سکول انتظامیہ کو مشکلات درپیش ہیں۔

سکول انتظامیہ کا موقف ہے کہ اس سے قبل متعدد بار متعلقہ ذمہ داران کو تحریری و ذبانی طور پر آ گاہ کر چکے ہیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہورہی۔

دوسری جانب کالج انتظامیہ کا کہنا ہے کہ نکاسی آب کا مناسب انتظام نہ ہونے کیوجہ سے بارش اور سیوریج کا پانی کالج کے باہرکھڑا ہو جانے سے کالج میں زیر تعلیم طالبات کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، کی دیوار کے ساتھ گہرا گڑھا بن گیا ہے بارشی پانی کیوجہ سے دیوار کے منہدم ہونے کا خطرہ لاحق ہو چکا ہے۔

سکول و کالج انتظامیہ نے کمشنر راولپنڈی، ڈپٹی ڈائریکٹر ماحولیات، ایڈمنسٹریٹر میونسپل کمیٹی سے سکول کے ساتھ قائم فلتھ ڈپو کو دوسری جگہ منتقل کرنے اور نجی ہاسٹل کی جانب سے چھوڑا جانے والا سیوریج کا گندہ پانی سیوریج لائن میں شامل کرنے کا مطالبہ کیاہے تاکہ طلباء و طالبات خوشگوار ماحول میں تعلیم حاصل کر سکیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button